سیکریٹری ہائیرایجوکیشن کاگورنمنٹ کالج کادورہ،کارکردگی سے مطمئن

 حال حوال

سیکریٹری ہائیر اینڈ ٹیکنیکل ایجوکیشن نورالحق بلوچ نے گورنمنٹ کالج کوئٹہ سریاب کا سرپرائیز وزٹ کیا. وہ 25 جولائی کی صبح 12 بجے کے قریب دورے پر پہنچے. جہاں کالج انتظامیہ نے ان کا استقبال کیا. وہ اسٹاف روم پہنچے اور تمام اساتذہ سے ملے. علاوہ ازیں انہوں نے کلاس رومز سمیت کالج کے مختلف حصوں کا دورہ کیا.

اس موقع پر کالج کے پرنسپل پروفیسر محمد حسن ترین ان کے ہمراہ تھے. کالج اسٹاف کے ساتھ انہوں نے خاصا وقت گزارا. اس دوران مختلف امور زیربحث آئے، جن میں بائیو میٹرک حاضری کا معاملہ سرفہرست تھا.

سیکریٹری نورالحق بلوچ کا کہنا تھا کہ بائیو میٹرک کا بنیادی مقصد ایسے افراد کی نشان دہی کرنا ہے جو مسلسل غیر حاضر ہیں یا اپنے فرائض ادا کرنے سے کتراتے ہیں. اس لیے حاضر اساتذہ کو اس سے کوئی پریشانی نہیں ہونی چاہیے. انہوں نے مزید کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ محض حاضری سے تعلیم کا معیار بہتر نہیں ہو جائے گا، لیکن یہ اُس جانب پہلا قدم ضرور ہو گا. معیارِ تعلیم بلند کرنے کے لیے ہمیں مزید اقدامات کی ضرورت ہو گی، جس میں بی ایس پروگرام کا نفاذ بھی شامل ہے اور یہ سب اساتذہ کے تعاون کے بغیر ممکن ہی نہیں.

جب کہ اساتذہ اس بات پہ مصر رہے کہ بائیومیٹرک حاضری غیر ضروری ہے، اور اگر اس کا نفاذ لازمی ہی ہے تو اسے استاد کی کلاس ٹائمنگ کے ساتھ مشروط کیا جائے. جس پر سیکریٹری ایجوکیشن قائل نہ ہو سکے اور گفتگو تعطل کا شکار رہی.

تاہم کالج کے مختلف شعبہ جات کے دورے کے دوران انہوں نے کالج انتظامیہ و اسٹاف کی تعریف کی اور ان کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ آج سے سات سال قبل جب میں آیا تو یہ ایک بند کالج تھا، لیکن آج اسے مکمل فعال و متحرک دیکھ کر خوشی ہو رہی ہے. امید ہے کہ آپ لوگ اس سلسلے کو برقرار رکھیں گے. اسے ایک رول ماڈل کالج بنانا ہمارا خواب ہے، اس سلسلے میں انتظامیہ و اسٹاف کو جو تعاون حاصل ہو، ہم اس کے لیے حاضر ہیں. 

(خبر 25 جولائی کو حال حوال پر شائع ہوئی)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *